’’پدماوت‘‘ پر دوبارہ پابندی کیلیے ریاستی حکومتیں پھر میدان میں آگئیں

اگر کسی فلم سے امن و امان کی صورتحال بگڑنے کا خدشہ ہوتو ریاستی حکومت فلم پر پابندی عائد کرسکتی ہے؛ فوٹوفائل

اگر کسی فلم سے امن و امان کی صورتحال بگڑنے کا خدشہ ہوتو ریاستی حکومت فلم پر پابندی عائد کرسکتی ہے؛ فوٹوفائل

نئی دہلی: بھارت کی دو ریاستوں مدھیہ پردیش اور راجستھان کی حکومتوں نے ’’پدماوت‘‘ کی نمائش پر دوبارہ پابندی لگانے کے لیے سپریم کورٹ سے رجوع کرلیا ہے۔

بھارتی سپریم کورٹ نے چند روز قبل  4 ریاستوں کی جانب سے ’’پدما وت‘‘ کی نمائش پر لگائی گئی پابندی کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے اسے ملک بھر میں ریلیز کرنے کا حکم دیا تھا تاہم جیسے جیسے اس کی ریلیز کی تاریخ قریب آرہی ہے ملک کے مختلف شہروں میں اس کے خلاف احتجاج بھی شدید ہوتا جارہا ہے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں:  ’گھومر‘ دوبارہ ریلیز

بھارتی میڈیا کے مطابق دو ریاستوں راجستھان اور مدھیہ پردیش کی حکومتوں نے فلم پر پابندی کے لیے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی ہے، درخواست میں کہا گیا ہے کہ سینماٹوگرافی ایکٹ میں یہ بات واضح طور پر کہی گئی ہے کہ اگر کسی فلم سے امن و امان کی صورتحال بگڑنے کا خدشہ ہوتو ریاستی حکومت فلم پر پابندی عائد کرسکتی ہے۔ فریقین کے دلائل سننے کے بعد سپریم کورٹ نے درخواست کو سماعت کے لیے منظور کرلیا ہے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: ’’پدماوت‘‘ کی راہ سے رکاوٹیں دور 

دوسری جانب شترانی منچ نامی خواتین کی تنظیم نے بھی فلم کی ریلیز کی صورت میں اجتماعی خودکشی کا اعلان کردیا ہے۔ شترانی منچ کی رہنماؤں کا موقف ہے کہ وہ فلم کے ذریعے اپنی ’’ہیرو‘‘ کی تذلیل برداشت نہیں کرسکتیں۔ اس لئے وہ 24 جنوری کو سپریم کورٹ میں اجتماعی خودکشی کی اجازت حاصل کرنے کے لئے باقاعدہ درخواست دائر کریں گی۔

واضح رہے کہ فلم کو درپیش مسائل ختم ہونے کا نام ہی نہیں لے رہے ہیں، حال ہی میں فلم کی ریلیز کے خلاف ایک نوجوان پٹرول کی بوتل کے ساتھ 350 فٹ اونچے موبائل ٹاور پرچڑھ گیا، نوجوان نے صرف اسی صورت میں نیچے آنے کی ہامی بھری ہے کہ ’’پدماوت‘‘پر ملک بھر میں مکمل طور پر پابندی عائد کردی جائے۔

ساحر لودھی کے خلاف سوشل میڈیا مہم کا دائرہ عدالت تک پہنچ گیا

ساحر لودھی کے پروگرام میں کم عمر بچیوں کے ناچ گانے کے مقابلے دکھائے جاتے ہیں، درخواستگزار؛ فوٹوفائل

ساحر لودھی کے پروگرام میں کم عمر بچیوں کے ناچ گانے کے مقابلے دکھائے جاتے ہیں، درخواستگزار؛ فوٹوفائل

لاہور: ہائی کورٹ میں ساحر لودھی کے مارننگ شو کے خلاف  درخواست سماعت کے لیے مقرر کرلی گئی ہے۔

ایکسپریس نیوز کے مطابق لاہور ہائی کورٹ میں  ساحر لودھی کے مارننگ شو پر پابندی کے لیے دائر دراخواست کو سماعت کے لئے مقرر کرلیا گیا ہے۔ درخواست میں وفاقی حکومت، پیمرا، ساحر لودھی اور دیگر کو فریق بنایا گیا ہے، درخواست گزارکا کہنا ہے کہ ساحر لودھی کے پروگرام میں کم عمر بچیوں کے ناچ گانے کے مقابلے دکھائے جاتے ہیں، کم عمر بچیوں کا رقص  نشر کرنے سے معاشرہ بے راہ روی کا شکار ہو رہا ہے جس سے قصور جیسے واقعات جنم لے رہے ہیں۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: ساحرلودھی کومعافی مانگنے کا حکم

درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ پیمرا ایسے پروگراموں کی نشریات کی روک تھام کے لیے کوئی اقدامات نہیں کر رہا، عدالت پیمرا کو ساحر لودھی کے پروگرام میں کم عمر لڑکیوں کے ناچ گانے نشر کرنے پر پابندی کا حکم دے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: 2017 میں تنازعات کا شکار ہونے والی پاکستانی شخصیات

واضح رہے کہ نامور میزبان و اداکار ساحر لودھی گزشتہ کچھ عرصے سے مارننگ شو میں کم عمر بچیوں سے  ناچ گانا کروانے کے حوالے سے شدید تنقید کا شکار ہیں، سوشل میڈیا صارفین نے ساحر لودھی اور ان کے شو پر کڑی تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان کاشو معاشرے میں بے راہ روی پھیلانے کا باعث بن رہا ہے، لہٰذا ان کے شو کو بند کیا جانا چاہیے۔

عامر خان کے بعد سلمان خان بھی چین میں دھوم مچانے کے لیے تیار

90 کروڑ کے بجٹ سے بننے والی فلم ’’بجرنگی بھائی جان‘‘ 630 کروڑ کا بزنس کرکے سپر ہٹ ثابت ہوئی تھی؛ فوٹوفائل

90 کروڑ کے بجٹ سے بننے والی فلم ’’بجرنگی بھائی جان‘‘ 630 کروڑ کا بزنس کرکے سپر ہٹ ثابت ہوئی تھی؛ فوٹوفائل

ممبئی: بالی ووڈ کے مسٹرپرفیکشنسٹ عامر خان کے بعد اب دبنگ اداکار سلمان خان بھی چائنیز باکس آفس پر دھوم مچائیں گے۔

اداکارعامر خان کی گزشتہ برس ریلیز ہونے والی فلم’’دنگل‘‘نے نہ صرف بھارت میں کامیابی کے جھنڈے گاڑھے بلکہ بالی ووڈ کی تاریخ میں پہلی بار چائنیز باکس آفس پر بھی کمال دکھانے میں کامیاب رہی۔ فلم’’دنگل‘‘ نے چائنا میں کمائی کے تمام ریکارڈ توڑتے ہوئے تقریباً 1000کروڑ کا بزنس کرکے عامر خان سمیت تمام لوگوں کو حیران کردیا  تھا، ’’دنگل‘‘کی کامیابی کو دیکھتے ہوئے عامر خان نے اپنی فلم’’سیکریٹ سپر اسٹار‘‘کو بھی چین میں ریلیز کرنے کا فیصلہ کیااور ان کا یہ فیصلہ صحیح ثابت ہوا۔ ’’سیکریٹ سپر اسٹار‘‘نے چائنیز باکس آفس پر پہلے دن 43 کروڑ 35 لاکھ کا بزنس کرکے ایک بار پھرچائنیز عوام کے دل جیت لیے۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: ’’بجرنگی بھائی جان‘‘ کی اداکارہ کو 2 سال قید کی سزا

عامر خان کی چین میں بڑھتی ہوئی مقبولیت اور کامیابی کو دیکھتے ہوئے اب سلمان خان نے بھی چائنا میں دھوم مچانے کی تیاری کرلی ہے۔ بھارتی میڈیا کے مطابق چائنیز فلم کمپنی ای اسٹار فلمز اور بھارتی کمپنی ایروس انٹرنیشنل کی پارٹنر شپ کے تحت سلمان خان کی فلم’’بجرنگی بھائی جان‘‘بھارت میں ریلیز کے تین سال بعد چین میں ’’چائنیز لینٹرن فیسٹیول‘‘کے موقعے پر2 مارچ کو ریلیز کی جائے گی۔ جب کہ فلم کو چائنیز زبان میں ڈب کیا جائے گا تاکہ وہاں کے لوگ باآسانی فلم کو سمجھ سکیں۔

اس خبرکوبھی پڑھیں: بجرنگی بھائی جان کی “منی” فلم سلطان دیکھ کر رونے لگیں

واضح رہے کہ  تقریباً 90 کروڑ کے بجٹ سے بننے والی فلم ’’بجرنگی بھائی جان‘‘ 630 کروڑ کا بزنس کرکے سپر ہٹ ثابت ہوئی تھی فلم میں سلمان خان، کرینہ کپور اور ننھی اداکارہ ہرشالی ملہوترا نے مرکزی کردار اداکیا تھا۔ فلم کی کہانی پاکستانی بچی کے گرد گھومتی ہے جو بھارت میں اپنے والدین سے بچھڑ جاتی ہے جسے سلمان خان واپس پاکستان پہنچاتے ہیں۔

پریانکا چوپڑا کی آسکر ایوارڈ میں نامزدگی کا امکان

آسکر نامزدگیوں کا اعلان 23 جنوری کو کیا جائیگا ‘ تقریب 4مارچ کو ہوگی۔ فوٹو: فائل

آسکر نامزدگیوں کا اعلان 23 جنوری کو کیا جائیگا ‘ تقریب 4مارچ کو ہوگی۔ فوٹو: فائل

ممبئی: دیسی گرل پریانکا چوپڑا یوں تو گزشتہ 3 سال سے ہالی ووڈ میں بھی اپنی جگہ بنانے میں مصروف ہیں تاہم پہلی بار انھیں فلمی دنیا کے سب سے بڑے ایوارڈ کیلیے نامزد کیے جانے کا امکان ہے۔

آسکر ایوارڈ کے آفیشل انسٹاگرام پیج پر پریانکا چوپڑا کی تصاویر شیئر کرتے ہوئے اعلان کیا گیا کہ آسکر نامزدگیوں کا اعلان 23 جنوری کو کیا جائے گا۔ اکیڈمی ایوارڈ کی جانب سے انسٹاگرام پر شیئر کی گئی تصویر میں پریانکا چوپڑا کو فلم کے سیٹ پر شوٹنگ میں مصروف دیکھا جاسکتا ہے۔

اکیڈمی ایوارڈ نے نہ صرف پریانکا چوپڑا بلکہ امریکی اداکارہ روساریو ڈاؤسن، مشیل روڈریگئز اور برطانوی اداکارہ رابل ولسن کی بھی شوٹنگ کے دوران کھینچی گئی تصاویر شیئر کیں۔ پریانکا چوپڑا سمیت ان اداکاراؤں کو ’بی ہائنڈ دی سین‘’سینماٹوگرافی‘ ’کاسٹیوم ڈیزائن‘ اور’میک اپ اینڈ ہیئر اسٹائل‘ جیسی کیٹیگریز میں نامزد کیے جانے کا امکان ہے۔

خیال رہے کہ 90 آسکر ایوارڈز کی تقریب رواں برس 4 مارچ کو ہوگی۔ آسکر ایوارڈز کیلیے دنیا کے مختلف ممالک کی جانب سے بھیجی گئی غیر ملکی زبان کی کیٹیگریز کی فلموں کو شارٹ لسٹ کردیا گیا ہے جب کہ شارٹ لسٹ کی گئی فلموں میں پاکستان، بھارت، ایران اورچین سمیت کسی بھی ایشیائی ممالک کی کوئی بھی فلم شارٹ لسٹ نہیں کی گئی۔ آسکر ایوارڈز کیلیےوژوئل ایفیکٹس کی بھی 20 فلموں کو شارٹ لسٹ کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ بولی ووڈ پگی چوپس پریانکا چوپڑا ہولی ووڈ میں ’بے واچ‘ فلم سے انٹری دے چکی ہیں، جب کہ وہ امریکی ایکشن تھرلر ڈرامے ’کوانٹیکو‘ میں بھی جلوہ گر ہوچکی ہیں جبکہ ان دنوں وہ بالی ووڈ کے بجائے ہولی ووڈ منصوبوں کی شوٹنگ میں ہی مصروف ہیں، ایسے وقت میں آسکر ایوارڈ منعقد کرنیوالی اکیڈمی انھیں 90 ویں ایوارڈ کیلیے نامزد کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔

بالی ووڈ جانے والوں کو آخرکار اپنے ملک میں ہی پناہ اور پیار ملتا ہے، صدف بھٹی

 عزت، شہرت کے ہوتے دوسرے ملک جاکر کام کرنا یااس کے لیے سفارشیں تلاش کرنا سمجھداری نہیں، صدف بھٹی۔فوٹو: سوشل میڈیا

 عزت، شہرت کے ہوتے دوسرے ملک جاکر کام کرنا یااس کے لیے سفارشیں تلاش کرنا سمجھداری نہیں، صدف بھٹی۔فوٹو: سوشل میڈیا

لاہور: اداکارہ وماڈل صدف بھٹی نے کہا کہ بالی ووڈ جانے والوں کو جس طرح سے انتہا پسند ہندواپنے رنگ بدلتے ہیں اوردھکے مار کراپنے ملک سے باہرنکالتے ہیں، اس کے بعد انہیں اپنے ہی ملک میں پناہ اورپیارملتا ہے۔ 

’’ایکسپریس‘‘سے گفتگوکرتے ہوئے صدف بھٹی نے کہا کہ دیکھا جائے تواس وقت پاکستان میں اچھی فلمیں بن رہی ہیں، نوجوان فلم میکر اچھا کام کررہے ہیں اوراب تو عوام کا رجحان بھی بننے لگا ہے۔ لیکن اس کے باوجود بالی ووڈ میں کام کرنے کا ’’جنون ‘‘ میرے نزدیک توسوائے بے وقوفی کے اورکچھ نہیں ہے۔

اداکارہ نے کہا کہ اب تک ہمارے ملک کے سپراسٹارزنے بالی ووڈمیں کام کیا ہے لیکن ان کووہاں کسی نے سپراسٹارنہیں مانا ، بلکہ جہاں بھی انہیں موقع ملا انھوں نے بڑی سوچی سمجھی سازش کے تحت انہیں خوار کیا اوربری طرح سے واپس جانے پرمجبور کیا۔ ایسے میں بھارت اوربالی ووڈ کا حقیقی چہرہ سب کے سامنے آچکا ہے۔ ان حالات میں بالی وڈ کی یاترا کرنے والے ہر ایک معروف اورنوجوان فنکارکو یہ سوچ کریہاں سے آگے بڑھنا ہوگا کہ وہ جس کامیابی کی تلاش میں انتہائی قدم اٹھا رہے ہیں۔ ان کوایک دن یہاں ہی واپس آنا ہے۔

صدف بھٹی نے کہا کہ بھارت میں حالات بگڑنے کے بعد جس طرح سے انتہا پسند ہندواپنے رنگ بدلتے ہیں اوردھکے مار کراپنے ملک سے باہرنکالتے ہیں، اس کے بعد انہیں اپنے ہی ملک میں پناہ اورپیارملتا ہے۔ اس لیے ایسی عزت اورشہرت کا کیا فائدہ جوپل بھرکی ہو جب کہ اس حوالے سے اپنا ملک سب سے اچھا ہے۔ یہاں ہم کام کریں یا نہ کریں، لیکن لوگ پیارکرتے اورعزت دیتے ہیں۔

اداکارہ نے کہا کہ جب اپنے ملک میں بہترین کام کرتے ہوئے عزت، شہرت اور اہم مقام مل سکتا ہے توپھرکسی دوسرے ملک میں جاکرکام کرنا یا وہاں کام کرنے کے لیے سفارشیں تلاش کرنا کہاں کی سمجھ داری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہماری پہچان پاکستان سے ہے اورمجھے پاکستانی ہونے پرفخرہے لیکن جولوگ بالی ووڈ کوکامیابی کی ضمانت مانتے ہیں وہ اپنے ساتھ ہی نہیں بلکہ اپنے ملک کے ساتھ بھی زیادتی کررہے ہیں۔ انہیں ہوش کے ناخن لینے چاہئیں۔